Friday, July 19, 2024
 

گجرات جیل میں قیدی کو ریکارڈنگ ڈیوائس فراہم کرنے پر تین وارڈرنز معطل

 



 راولپنڈی: ڈسٹرکٹ جیل گجرات میں قیدی کو ریکارڈنگ ڈیوائس فراہم کرنے پر تین وارڈنز کو نوکری سے معطل کردیا گیا۔

قیدی ظہیر الدین بابر نے حوالاتی اکمل حسین کی مدد سے جیل انتظامیہ کو بلیک میل کرنے کیلئے خود پر تشدد کا سین بنا کر پین نما ریکارڈنگ ڈیوائس کی مدد سے ویڈیو ریکارڈ کی تھی۔

معاملے کی انکوائری کے بعد جیل وارڈنز محمد نزیر، فرخ امین اور عدنان خان کو قیدی ظہیر الدین کو ریکارڈنگ ڈیوائس فراہم کرنے پر نوکری سے معطل کردیا گیا۔

ہیڈ وارڈن اسجد منیر اور گلزار حسین اور اسسٹنٹ سپرٹینڈنٹ جیل بابر اکرم کو بطور ایگزیکٹو انچارج شو کاز نوٹس جاری کیا گیا ہے جبکہ ڈپٹی سپرٹینڈنٹ جیل اور سپرٹینڈنٹ جیل سے بھی وضاحت طلب کی گئی ہے۔

آئی جی جیل پنجاب میاں فاروق نزیر کا کہنا ہے کہ اس حرکت پر مذکورہ اسیران کے خلاف ایف آئی آر درج کروائی گئی ہے جبکہ جیل اہلکاران و افسران کے خلاف تادیبی کاروائی کا آغاز کیا جا چکا ہے، تمام تر قانونی تقاضے پورے کرتے ہوئے ذمہ داران کو قرار واقعی سزادی جائے گی۔

آئی جی جیل پنجاب کا کہنا ہے کہ قیدی ظہیر الدین انتہائی شاطر اور سازشی ذہن کا حامل ہے، مذکورہ قیدی اس سے قبل بھی اٹھارہ مرتبہ جیل قوانین کی خلاف ورزی کرنے پر آٹھ مختلف جیلوں سے دوسری جیلوں میں شفٹ کیا جا چکا ہے۔

 

اگر آپ اس خبر کے بارے میں مزید معلومات حاصل کرنا چاہتے ہیں تو نیچے دیے گئے لنک پر کلک کریں۔

مزید تفصیل